Dawa.tv I Love Islam
Home      AJEEB BAAT
بسم الله الرحمن الرحيم

عجــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــیب  بات

 

100 ریال

ہمیں اتنی بڑي رقم لگتی ہے جب ہم مسجد ساتھ لے کر جاتے ہیں صدقہ دینے کے لیے
 
 
 
مگر

بڑی معمولی رقم لگتی ہے جب ہم بازار لے کر جاتے ہیں

 
 
عجیب

   کسی وزیر یا بادشاہ کے دربار میں حاضری کو خوش نصیبی اور اعزاز تصور
 
کرتے ہیں  ان کے دربار میں ہمارےادب و احترام کی کوئی مثال نہیں ملتی
 
 
مگر
  اللہ کے سامنے  حاضری ہی بھاری لگتی ہے اور پھر اللہ کے دربار میں جمائی ، سستی، اور کاہلی کی کوئی مثال نہیں ملتی
 

عجیب

دو گھنٹے

ہمیں بہت طویل لگتے ہیں مسجد میں

 

عــــــــــــــــــــــــــــــــجیب

ایک گھنٹہ

ہمیں بہت طویل لگتا ہے اللہ کی عبادت میں

 

مگر

 یہی ایک گھنٹہ بہت معولی لگتا ہے انٹرنٹ پر یا ٹی وی کے آگے 

 

  عــــــــــــــــــــــــــــــــجیب

ہمیں قرآن کے دو صفحے پڑھنا بے حد مشکل لگتا ہے
مگر

اس کے برعکس

 
 ناولز کی کتابیں پڑھنا بے حد آسان۔۔۔۔  
 
عــــــــــــــــــــــــــــــــجیب
ہم میڈیا و اخبارات کی باتوں پر تصدیق کرنے میں دیر نہیں کرتے
مگر
قرآن جو کہتا ہے اس پر شک و شبہات میں پڑے ہیں
 عــــــــــــــــــــــــــجیب

کیسے  یک دم ہم مغرب کے  تہذیب میں رنگ جاتے ہیں اور ان کے طریقے اپنا لیتے ہیں

مگر 

 
اپنے رسول عليه الصلاة والسلام کے طریقے (سنت) کو اپنانا  گوارا نہیں
 
 عــــــــــــــــــــــــــجیب
 ہمیں دعاء کے وقت ہر بات یاد نہیں آتی
 مگر
 
 

دوستوں سے گپے مارتے ہوۓ دنیا جہاں کی باتیں یاد آتی ہیں

؟

 
 عجـــــــــــــــــــــــــــــــــــــیب
ہر پارٹی یہ مجمع میں لوگو کی کثرت آگے  نظر آتی ہے
مگر

مسجد میں  پہلی صف کی رغبت  نظر نہیں آتی
لوگو کی  کثرت آخری صف میں نظر آتی  ہے

 

 عجـــــــــــــــــــــــــــــــــــــیب
ہمیں قرآن کی دو آیتیں یاد کرنا بہت مشکل لگتاہے
مگر
گانے اور ترانے یک دم یاد کر لیتے ہیں
آپ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا
 جنت ناگوار چیزوں سے گھیری گئی ہے اور جھنم خوشگوار چیزوں سے گھیری گئی ہے

(جو انسانی نفس کو خوشگوار لگتی ہے)
رواہ مسلم

اور آپ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا
"دنیا کی مٹھاس آخرت کی کڑواہٹ ہے اور دنیا کی کڑواہٹ آخرت کی مٹھاس ہے
رواہ احمد و الحاکم

فَأَمَّا مَن طَغَى

 تو جس [شخص] نے سر کشی کی ہوگی   

وَآثَرَ الْحَيَاةَ الدُّنْيَا

اور دنيوی زندگی کو ترجيح دی ہوگی

فَإِنَّ الْجَحِيمَ هِيَ الْمَأْوَى

 تو اس کا ٹھکانا جھنم ہی ہے

 

 وَأَمَّا مَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّهِ وَنَهَى النَّفْسَ عَنِ الْهَوَى
ہاں جو شخص اپنے رب کے سامنے کہرے ہونے
سے ڈرتا رہا ہو گا  اور اپنے نفس  کو  نفسی خواہش سے روکتا رہا ہوگا

 

 فَإِنَّ الْجَنَّةَ هِيَ الْمَأْوَى

 تو اس کا ٹھکانا جنت ہی ہے

 

وَلَا تَتَّبِعِ الْهَوَى فَيُضِلَّكَ عَن سَبِيلِ اللَّهِ 
اور اپنے
نفسانی خواہش کی پیروی نہ کرو ورنہ وہ تمہیں اللہ کی راہ سے بھٹکا دے گی

 

 

آج عمل کا دن ہے حساب کا نہیں

کل حساب کا دن ہوگا عمل کا نہیں

 

سنا تھا ہم نے لوگوں سے ۔۔۔۔۔

 محبت چیز ایسی ہے ۔۔۔

چھپاۓ چھپ نہیں سکتی ۔۔۔

یہ آنکھوں میں چمکتی ہے ۔۔

۔ یہ چہروں پر دمکتی ہے ۔۔۔

دلوں تک کو رلاتی ہے ۔۔۔۔

 

مگر

 

اگر یہ سب سچ ہے ۔۔۔

تو پھر ہمیں اپنے رب

 

سے بھلا کیسی محبت ہے

نہ آنکھوں سے جھلکتی ہے

 نا چہروں پر دمکتی ہے ۔۔

نا لہجوں میں سلگتی ہے

نا دلوں کو آزماتی ہے

 نا راتوں کو رلاتی ہے

 

یہ کیسی محبت ہے ۔۔۔

 

??????

 

بھلا کیسی محبت ہے

May ALLAH be with U

 Remember me in UR Prayers